گدھے کہیں کے

Amir Hameed My Writings, Page of My Diary Leave a Comment

یہ ان دنوں کی بات ہے جب میں کالج میں گریجویٹ کا طالبعلم تھا۔ گرمیوں کے دن تھے۔  ان دنوں ٹرانسپورٹ کیلیے نیو خان بسیں یہاں بہت عام تھی۔ طلبہ اور طالبات کیلیے کرایہ یا تو ایک روپیہ تھا یا وہ اکثر مفت سفر کر لیتے تھے۔ میرا آخری لیکچر کافی دیر سے ہوتا تھا۔ اس آخر لیکچر کو لے …

احساس

Amir Hameed My Writings, Page of My Diary Leave a Comment

ہوٹل کے ایک ٹیبل پر بیٹھی وہ کہہ رہی تھی دنیا سے غربت ختم ہونی چاہیے۔ غریب لوگوں کو دیکھ کر میرا دل بھر آتا ہے۔ بیچاورں کے پاس تو کھانے کے لیے بھی کچھ نہیں ہوتا۔ یہ کہتے ہوئے اس کے چہرے پر افسردگی کے آثار نظر آنے لگے۔ اور اچانک اس سے گوشت کا نوالہ زمین پر گر …